We have detected Lahore as your city

سردیوں میں الرجیز سے کیسے بچیں؟

Dr. Muhammad Salman

3 min read

Find & Book the best "General Physicians" near you

موسم موسم سرما الرجی والے لوگوں کے لیے سال کا بدترین وقت ہوتا ہے۔ سردی کے موسم میں الرجیز سے بچنے کے بے شمار طریقے ہیں جس میں اول نمبر پر صفائی ستھرائی کے ماحول میں رہنا اور اپنی خوراک میں احتیاط کرنا ہے۔

الرجی کی علامات عام طور پر موسم سردیوں میں بدتر ہوتی ہیں۔ علامات انڈور یا آؤٹ ڈور الرجین، جیسے دھول کے ذرات یا پالتو جانوروں کی خشکی کے نتیجے میں ہوسکتی ہیں۔ الرجی کی علامات سے نمٹنے کے لیے سب سے مؤثر طریقوں میں سے ایک مناسب بستر کی حفاظت ہے۔ 

۔1 ہائیڈریٹڈ رہیں

جب آپ کے جسم میں پانی کی کمی ہو گی تو آپ کی قوت مدافعت کم ہو جائے گی۔ یہ ناک کے بند ہونے، ناک کے بہنے، چھینکنے اور کھانسی کا باعث بنے گا۔ بیدار ہونے پر 2 سے 3 کپ سادہ گرم پانی پینے کی کوشش کریں۔ جی ہاں سادہ پانی ہمارے جسم کے لیے بہت سارے حیرت انگیز کام کر سکتا ہے۔

آپ اپنے جسم کی ضروریات کو دوبارہ بھرنے کے لیے سوپ یا جوس بھی پی سکتے ہیں۔ آپ جڑی بوٹیوں والی چائے کا گھونٹ بھی پی سکتے ہیں جس میں سوزش کو دور کرنے کی خصوصیات ہوتی ہیں گرم شاور یا غسل لینے سے بھی بھری ہوئی ناک کو صاف کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

۔2 سٹیم میں سانس لیں

اس سے بند ناک کھولنے میں مدد مل سکتی ہے اور آپ کو آسانی سے سانس لینے میں مدد دے سکتی ہے۔ اپنے سر کو نیم گرم  پانی سے بھرے پیالے کے اوپر کچھ فاصلے پر رکھیں اور بھاپ کو اپنی سانس میں لے جانے تک سر پر تولیہ رکھیں یا گرم شاور چلاتے ہوئے اپنے باتھ روم میں بیٹھیں۔ ضدی اور بھری ہوئی ناک کو کم کرنے اور سانس لینے میں آپ کی مدد کرنے کا یہ ایک آسان اور موثر طریقہ ہے۔

آپ شاور میں بھی لیٹ سکتے ہیں اور کچھ گہری سانسیں لے سکتے ہیں۔ اگر آپ کے پاس کوئی ایسی علامات ہیں جو سردی کی طرح محسوس ہوتی ہیں لیکن آپ ایک ہفتے سے زیادہ عرصے سے موسم کی زد میں ہیں تو آپ کو موسمی الرجی ہو سکتی ہے جس میں سٹیم کا لیا جانا نہایت ضروری ہے۔

۔3 صحت مند غذا کھائیں

جو لوگ بہت ساری تازہ سبزیاں، پھل اور گری دار میوے کھاتے ہیں خاص طور پر انگور، سیب، نارنجی اور ٹماٹر کھاتے ہیں، ان میں الرجی کی علامات کم پائی جاتی ہیں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ صحت مند غذا آپ کے پورے جسم کے لیے اچھی ثابت یوتی ہے اس لیے جتنا ہو سکے ہر کھانے میں کم از کم ایک تازہ پھل اور سبزی شامل کریں۔

۔4 ہلدی

ہلدی ایک ایسا مصالحہ ہے جو دنیا بھر کے کھانوں میں عام ہے کیونکہ ہلدی میں کرکیومین ہوتا ہے۔ یہ وہ جزو ہے جو ہلدی کو چمکدار پیلا رنگ دیتا ہے۔ ہلدی کچھ مخصوص حالات کے لیے کچھ دواؤں کی طرح کارآمد کام کرتی دکھائی دیتی ہے جن میں سے الرجی بھی ایک ہے۔

ہلدی ایک کے طور پر کام کر سکتی ہے۔ ہلدی الرجی کی علامات کو کم کرنے اور نزلہ زکام سے بچنے میں مدد کر سکتی ہے۔ اچھی صحت کے لیے ان دیگر شفا بخش جڑی بوٹیوں اور مصالحوں کو اپنی ترکیبوں میں شامل کرنے کی کوشش کریں۔

۔5 پروبائیوٹکس کا استعمال کریں

الرجی مدافعتی نظام میں عدم توازن کا نتیجہ ہے جس کی وجہ سے جسم کسی محرک پر بہت سخت رد عمل ظاہر کرتا ہے۔ بہت سے مطالعات گٹ میں فائدہ مند بیکٹیریا کی موجودگی کو الرجی کے کم واقعات سے جوڑتے ہیں۔

حمل اور دودھ پلانے کے دوران ماں کے آنتوں کے بیکٹیریا بچے کے زندگی بھر الرجی ہونے کے امکان کو متاثر کر سکتے ہیں اس لیے پروبائیوٹکس کا استعمال کیا جانا ضروری ہے۔

۔6 پرہیز کریں

گلوٹین اور ڈیری بہت زیادہ بلغم پیدا کرتے ہیں اس طرح الرجی کے موسم میں جب آپ کا جسم پہلے سے ہی اضافی بلغم پیدا کر رہا ہو تو ان سے پرہیز کرنا آپ کو بہتر سانس لینے میں مدد دے سکتا ہے۔

اگر آپ کو گلوٹین یا ڈیری کے لیے حساسیت ہے تو آپ کے جسم پر الرجین کے بوجھ کو کم کرنے سے ماحولیاتی الرجیوں کے خلاف آپ کے ردعمل میں مزید کمی آئے گی۔ اچھی دماغی صحت پورے شخص کے علاج پر بہت زیادہ انحصار کرتی ہے۔

۔7 شہد

شہد کو الرجی کے موسم سے پہلے شروع کرنا چاہیے۔ شہد کسانوں کے بازاروں اور مقامی طور پر گروسری اسٹورز پر پایا جا سکتا ہے۔ الرجی میں کچے شہد کی بہت زیادہ سفارش کی جاتی ہے اس حقیقت کی وجہ سے کہ شہد عام طور پر گرمی کی زد میں رہتا ہے اور اس وجہ سے یہ قدرتی خامروں اور اینٹی آکسیڈنٹس سے محروم ہو سکتا ہے جو جسم کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔ شہد کو ہاضمے میں مدد اور سانس کے انفیکشن کے لیے کھانسی کو ختم کرنے میں بھی جانا جاتا ہے۔

۔8 پیپرمنٹ آئل کا استعمال کریں

پیپرمنٹ آئل کو دنیا کی قدیم ترین دوا کہا جاتا ہے۔ موجودہ زمانے میں اسے اکثر کھانے میں ذائقے کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے لیکن یہ ثابت ہو چکا ہے کہ اس میں جسم کے لیے بہت سی سازگار خصوصیات  ہیں۔

یہ ایک قدرتی سوزش ہے جو الرجی کی وجہ سے ناک کی بندش کو دور کرنے میں معاون ہے۔ مزید برآں پیپرمنٹ کا تیل بدہضمی، چڑچڑاپن آنتوں کے سنڈروم کی علامات، متلی اور سردرد کو دور کرنے میں مدد کے لیے جانا جاتا ہے۔

۔9 صفائی کرتے وقت یا باہر نکلتے وقت ماسک پہنیں

ممکنہ طور پر متعدی سانس کی بوندوں کو روکنے کے علاوہ حفاظتی چہرے کے ماسک مثالی طور پر ایک سرجیکل ماسک یا زیادہ سے زیادہ تحفظ کے لیے آپ کی ناک اور منہ کو الرجین سے بچا سکتے ہیں۔ جب بھی آپ اپنے گھر کی صفائی کر رہے ہوں یا جب آپ طویل عرصے تک اپنے گھر سے باہر رہتے ہوں تو اس دوران  ماسک کو  پہننے پر غور کریں کیونکہ صفائی کرتے وقت اور باہر نکلتے وقت زیادہ دھول کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

۔10 طب کے مشورہ سے الرجی کی دوا لیں

الرجی کی دوا موسمی الرجی کے مؤثر طریقے سے علاج میں مدد کر سکتی ہے۔ اینٹی ہسٹامائن دواؤں کی ایک عام شکل ہے جو سانس کے مختلف مسائل سے وابستہ علامات کو دور کرنے میں مدد کرتی ہے۔ آپ اپنی الرجی کے بارے میں اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کر سکتے ہیں۔ ڈاکٹر آپ کو آپ کی حالت کے علاج کے لیے دوائیں دے گا جس سے آپ کی الرجی کو کم کرنے میں مدد ملے گی۔

Disclaimer: The contents of this article are intended to raise awareness about common health issues and should not be viewed as sound medical advice for your specific condition. You should always consult with a licensed medical practitioner prior to following any suggestions outlined in this article or adopting any treatment protocol based on the contents of this article.

Dr. Muhammad Salman
Dr. Muhammad Salman - Author Dr. Muhammad Salman is a top Internal Medicine Specialist with 17 years of experience practicing at MaxHealth Hospital, Islamabad. You can book an in-person appointment or an online video consultation with Dr. Muhammad Salman through oladoc.com or by calling at 0518151800.
Book Appointment with the best "General Physicians"