We have detected Lahore as your city

عیدالاضحیٰ صحت مند طریقے سے گزارنے کے لیے چند اہم تجاویز

Dr. Hira Tanveer

3 min read

Find & Book the best "General Physicians" near you

عید الاضحی کا مقدس تہوار ایک بار پھر سے قریب ہے اور اس کے ساتھ ہی معمول کی خوشی، مسرت اور بلاشبہ روایتی جانوروں کی قربانی آتی ہے۔ تاہم اس سال ہمیں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کی وجہ سے عید الاضحی کے موقع پر زیادہ محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ اس کے علاوہ عید پر پیٹ کے مسائل عام ہیں۔ یہاں چند تجاویز ہیں جو اس عید کے دوران آپ کو صحت مند اور محفوظ رہنے میں مدد کر سکتی ہیں۔

۔1 سوشل ڈسٹینسنگ برقرار رکھیں

چونکہ کورونا وائرس کے کیسز بڑھ رہے ہیں ہم سب کو محفوظ رہنے اور وبائی امراض کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سماجی دوری کا خیال رکھنا چاہیے۔ اگر آپ عید کی نماز پڑھنے کے لیے مسجد جاتے ہیں تو جماعت میں آپ کے بائیں اور دائیں کھڑے شخص سے مناسب فاصلہ رکھیں۔ اس کے علاوہ، دوسرے لوگوں سے ہاتھ ملانے اور گلے ملنے سے گریز کریں۔ اگر آپ کسی سے ہاتھ ملاتے ہیں تو بعد میں اپنے ہاتھ صاف کرنے کے لیے سینیٹائزر کا استعمال کریں۔

۔2 تلے ہوئے گوشت سے پرہیز کریں

اگر اس عید پر گوشت کھانے کا ارادہ ہے تو کوشش کریں کہ اسے ابلی ہوئی شکل میں کھا لیں اور اسے تلی ہوئی شکل میں کھانے سے گریز کریں کیونکہ تلے ہوئے گوشت میں چکنائی اور کیلوریز زیادہ ہوتی ہیں اس سے پیٹ کے مسائل جیسے گیس اور بدہضمی ہو سکتی ہے۔

۔3 کھانے کے بعد گرین ٹی پئیں

ایک کپ گرین ٹی پینے سے میٹابولزم کی شرح کو بڑھانے میں مدد مل سکتی ہے۔ اس کے علاوہ عام دودھ والی چائے بھی پی جا سکتی ہے لیکن  وہ ایسی چائے ہونی چاہیے جس میں چینی کم ہو۔ ۔

۔4 فیزی ڈرنکس سے پرہیز کریں

عیدالاضحی کے دنوں میں ٹھنڈے مشروبات کے استعمال سے کئی وجوہات کی بنا پر پرہیز کرنا چاہیے۔ تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ سافٹ ڈرنکس کے مجموعی صحت پر انتہائی مضر اثرات ہوتے ہیں جیسے موٹاپا اور تیزابیت لہٰذا عیدالاضحی کے دنوں میں سافٹ ڈرنکس پینے سے گریز کریں اور ان کی جگہ تازہ پھلوں کے جوس یا پانی پینے کی کوشش کریں۔

۔5 میٹھی چیزیں اعتدال میں کھائیں

عید میٹھی چیزوں کے بغیر ادھوری محسوس ہوتی ہے۔ لیکن زیادہ میٹھی چیزیں کھاتے وقت محتاط رہیں کیونکہ یہ آپ کی صحت کو نقصان پہنچا سکتی ہے۔ لہٰذا کھیر، شیریں خرما، گلاب جامن، کھیر اور مختلف قسم کی مٹھائیوں سے پیٹ بھرتے وقت یہ بات ذہن میں رکھیں کہ زیادہ میٹھا پیٹ میں درد، گیس اور دیگر صحت کے مسائل کا باعث بن سکتا ہے۔ ذیابیطس کے مریضوں کو عید پر میٹھی چیزیں کھانے میں خاص احتیاط کرنی چاہیے۔

۔6 گرلڈ کھانا کھائیں

تلا ہوا کھانا سب سے بڑا مجرم ہے جو آپ کو اہم دن پر شدید پریشانی میں ڈال سکتا ہے۔ تلی ہوئی خوراک کا استعمال بہت زیادہ مقدار میں غیر محفوظ تیل کی کھپت کا باعث بنتا ہے۔ لہذا اسے بھوننے کے بجائے اچھی طرح سے گرل کرنا بہتر ہے۔ مثال کے طور پر کھانے کو زیتون کے تیل میں بھوننا چاہیے جو آپکو غیر صحت بخش چربی سے بچنے میں مدد دے گا جو صحت کے سنگین مسائل کا باعث بن سکتے ہیں۔

۔7 زیادہ کھانے سے پرہیز کریں

 عیدالاضحیٰ پر آپ کو زیادہ کھانے سے گریز کرنا چاہیے۔ ہمیشہ اعتدال میں کھائیں اور فٹ اور صحت مند رہیں۔

 ۔8 گوشت کے ساتھ ساتھ سبزیاں زیادہ کھائیں

قبض سے بچنے کے لیے گوشت کے ساتھ پھلوں اور سبزیوں کا زیادہ استعمال زیادہ کریں۔ گوشت کھانے کے ساتھ ساتھ سلاد بھی کھائیں۔

 ۔9 ورزش کریں

زیادہ گوشت کھانے کے بعد اپنے جسم کو متحرک رکھنے کا وقت ضروری ہوتا ہے۔ ہلکی سے ورزش کے لیے کم از کم 10 منٹ کا وقت دیں یا تھوڑی سی چہل قدمی کے لیے جائیں۔ غذائی ماہرین اور ڈاکٹروں نے مشورہ دیا ہے کہ آخری کھانا سونے کے وقت سے 2 گھنٹے پہلے ختم کرنا چاہیے۔ اس کے بعد آپ تقریباً 30 منٹ تک لمبی چہل قدمی کر سکتے ہیں تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ کھانا وقت کے اندر ہضم ہو جائے اور آپ آسانی سے ہلکے اور صحت مند محسوس کر کے بستر پر جا سکیں۔.

۔10 گوشت کا صحیح استعمال

چونکہ عید الاضحی میں موسم گرما کے وسط میں آتی  ہے اس لیے آپ کو گرمی کا بھی خیال رکھنا ہوتا ہے۔ گوشت کو زیادہ دیر تک باہر رہنے دینے سے یہ خراب ہو سکتا ہے۔ اسی طرح اگر آپ کا رفریجر ٹھیک طرح سے کام نہیں کر رہا ہے تو اس بات کے امکانات ہیں کہ گوشت مزید دیر تک استعمال کے قابل نہ رہے۔ وہ گوشت جو خراب ہو یا صحیح طریقے سے نہ دھویا گیا ہو آپ کی صحت کو خطرے میں ڈال سکتا ہے۔

۔11 احتیاط سے اور چھوٹے حصوں میں کھائیں

ایک بار کھانے کے بجائے چھوٹے حصوں میں اور وقفے میں کھائیں۔ اگرچہ آپ کی غذا کی خواہش آپ کے پسندیدہ کھانا کھانے کی خواہش پر قابو پانے کے قابل نہیں ہوسکتی ہے لیکن اس سے ہاضمہ اور ہضم کے مسائل پیدا ہوسکتے ہیں۔ لہذا احتیاط سے کھانا چاہیے.

۔12 کھانے کے درمیان کم از کم 6 گھنٹے کا وقفہ کریں

مطالعے سے معلوم ہوا ہے کہ لگاتار دو مسلسل کھانے کے درمیان تاخیر کم از کم 6 گھنٹے سے کم نہیں ہونی چاہیے۔ یہ کھانے کو صحیح طریقے سے ہضم ہونےمیں مدد دیتا ہے۔

پیٹ کی خرابی کی صورت میں آپ علاج کے لیے اولا ڈاک کے ذریعے معدے کے ماہر سے مشورہ کر سکتے ہیں۔ آپ اپنی اپائینٹمنٹ بک کروانے کے لئے صبح 9 بجے سے 11 بجے تک اولا ڈاک کی ہیلپ لائن 04238900939 پر بھی کال کرسکتے ہیں

Disclaimer: The contents of this article are intended to raise awareness about common health issues and should not be viewed as sound medical advice for your specific condition. You should always consult with a licensed medical practitioner prior to following any suggestions outlined in this article or adopting any treatment protocol based on the contents of this article.

Dr. Hira Tanveer - Author Dr. Hira Tanveer is an MBBS doctor and currently serving at CMH Lahore. Writing is her favorite hobby as she loves to share professional advice on trendy healthcare issues, general well-being, healthy diet, and lifestyle.
Book Appointment with the best "General Physicians"