We have detected Lahore as your city

بچوں کا اسکرین ٹائم کیسے کم کریں؟

Dr. Rizwan Gohar

5 min read

Find & Book the best "Child Specialists" near you

بچوں میں اسکرین ٹائم کو کم کرنا بہت ضروری بن گیا ہے۔ آج کے بچے چھوٹی عمر سے ہی لیپ ٹاپ، کمپیوٹر اور موبائل فون کے استعمال کے عادی ہو جاتے ہیں۔ والدین کو ایسے گیجٹس کے منفی اثرات سے آگاہ ہونا چاہیے اور ان کے استعمال کو محدود کرنا چاہیے کیونکہ یہ بچوں کی صحت کو متاثر کر سکتے ہیں۔

جو بچے اسکرین کے سامنے بہت زیادہ وقت گزارتے ہیں انہیں دیگر مسائل بھی ہو سکتے ہیں جیسے بہت کم نیند یا بہت زیادہ وزن کا بڑھ جانا۔ بچوں کے اسکرین ٹائم کو کنٹرول کرنے کے لیے آپ ان اصولوں پر عمل کر سکتے ہیں۔

  • اسکرین کے وقت کی حد مقرر کریں۔ گھر کا ایک اصول طے کریں کہ آپ کے بچوں کے پاس دن میں اسکرین کے لیے 2 گھنٹے سے زیادہ کا وقت نہ ہو۔
  • اسکرین کا وقت زیادہ اہم بات یہ ہے کہ ایک بار جب یہ قاعدہ بن جائے تو اسے نافذ کریں۔ 
  • انٹرنیٹ پروگرام جو TV یا کمپیوٹر پر حدود متعین کرتے ہیں۔ گھر میں ٹی وی کے اثر کو کم سے کم کریں۔ اپنے بچے کے سونے کے کمرے میں ٹی وی یا کمپیوٹر نہ لگائیں۔
  • بچے اپنے کمرے میں اپنے ساتھیوں کے مقابلے میں ایک عام دن میں تقریباً ڈیڑھ گھنٹے زیادہ ٹی وی دیکھنے میں گزارتے ہیں۔ اس لیے ضروری ہے کہ بچوں کے کمرے میں ٹی وی یا کمپیوٹر کو نہ لگایا جائے۔
  • فیملی کے کھانے کے وقت ٹی وی بند کر دیں۔ کھانے کی جگہ اگر آپ کے پاس وہاں ہے جہاں ٹی وہ لگا ہے تو اس جگہ کو تبدیل کر لیں۔ فیملی کے ساتھ کھانا ایک دوسرے سے بات کرنے کا اچھا وقت ہے۔ 
  • جو خاندان ایک ساتھ کھاتے ہیں وہ الگ الگ کھانے والے خاندانوں کے مقابلے زیادہ غذائیت سے بھرپور کھانا کھاتے ہیں اور ان لوگوں میں پیار محبت بہت زیادہ ہوتا ہے۔
  • ہفتے میں کم از کم دو سے تین بارفیملے کے ساتھ کھانوں میں ایک ساتھ کھانے کو ترجیح دیں اور شیڈول بنائیں۔
  •  دیگر اختیارات اور متبادل فراہم کریں۔ ٹی وی دیکھنا آپ کے بچے کی عادت بن سکتا ہے۔ اور بعد میں پھر اس بچے کو اس عادت سے دور کرنے میں مسائل آسکتے ہیں اس لیے ضروری ہے کہ آپ ٹی وی دیکھنا بچے کی عادت مت بننے دیں۔
  • ان کے لیے اپنا وقت گزارنے کے لیے دوسرے متبادل جیسے باہر کھیلنا کوئی شوق یا کھیل سیکھنا یا اس کے علاوہ ان سرگرمیوں میں شامل کریں جن کا بچوں کو شوق ہے۔ خاندان اور دوستوں کے ساتھ وقت گزارنا سکھائیں۔
  •   جہاں تک ہو سکتا ہے اپنے بچوں کے لیے ایک اچھی مثال قائم کریں۔ آپ کو اپنے بچوں کے لیے ایک اچھا رول ماڈل بننے کی ضرورت ہے اور اپنے اسکرین ٹائم کو مزید محدود کرنے کی ضرورت ہے۔
  • ایک دن میں 2 گھنٹے سے زیادہ بچے کو ہر گز نہ ٹی وی کے سامنے بیٹھنے دیں۔ اگر آپ کے بچے آپ کو اپنے اصولوں پر عمل کرتے ہوئے دیکھتے ہیں تو وہ ان کی پیروی کرنا شروع کر دیتے ہیں اس لیے آپ بھی وہی کریں جو آپ چاہتے ہیں کہ آپ کے بچوں کو بھی ویسا کرنا چاہیے۔
  • ٹی وی دیکھنے یا انٹرنیٹ پر سرفنگ کرنے کے بجائے اپنے خاندان کے ساتھ کچھ تفریحی اور فعال کام کرنے میں وقت گزاریں۔
  • کسی بچے کو انعام دینے یا سزا دینے کے لیے TV کا استعمال نہ کریں۔ اس طرح کی مشقیں ٹی وی کے لیے اور بھی اہم لگتی ہیں۔
  • کمپیوٹر اور ٹی وی کو اپنے گھر کی مشترکہ جگہوں پر رہنے دیں۔ جب آپ کے بچے کچن یا لونگ روم میں اسکرینوں کا استعمال کرتے ہیں تو ان کے دیکھنے والے شوز وہ جو گیمز کھیلتے ہیں، اور ان کی ویب سائٹس پر نظر رکھنا آسان ہوتا ہے۔
  • اپنی فیملی کے شیڈول میں ٹیک فری وقت شامل کریں۔ کسی بھی عمر میں بچوں کو معلوم ہونا چاہیے کہ کچھ مخصوص اوقات ہوتے ہیں جب اسکرینیں بند رہتی ہیں جیسے کھانے کے وقت اور سونے سے پہلے کا وقت شامل ہے۔ 
  • سب سے پہلے والدین یہ  دیکھیں کہ آپ کتنی بار اپنے فون کو استعمال کرتے ہیں۔ اگر آپ اپنے فون کو ہر وقت اپنے کانوں سے لگائے رکھتے ہیں تو آپ کے بچوں کو کوئی اچھی وجہ نظر نہیں آئے گی کہ انہیں اپنی اسکرینوں سے کیوں ہٹنا چاہیے یہ اس لیے ہے کیوںکہ بچے جو دیکھیں گے وہی سیکھیں گے۔ اس کے علاوہ آپ کے اپنے بچوں کے ساتھ گزرا وقت بھی بے انتہا متاثر ہو سکتا ہے۔ والدین اکثر میز پر موجود بچوں کی نسبت اپنے اسمارٹ فونز پر زیادہ توجہ مرکوز رکھتے ہیں جو کہ یہ بھی ان عادات میں سے ایک ہے جس میں بچے کو واپس اس عادت کو چھڑوانا کافی مشکل ہو سکتا ہے۔
  • ایک حد کو اسکرین کے استعمال کا باقاعدہ حصہ بنائیں۔ جب اصول واضح اور یکساں ہوں تو آپ روزانہ کی لڑائیوں سے بچ سکتے ہیں جب آپ بچوں کو بتائیں کہ ٹی وی کمپیوٹر یا فون بند کرنے کا وقت آگیا ہے تو جو اصول آپ نے بنائے ہوں گے ان کے مطابق بچے کام کریں بس ان اصولوں پر سختی سے عمل کرنے کی ضرورت ہے۔
  •  اسکرین کے وقت کی مختلف حدود کی بچوں کو وضاحت کرنے کے لیے  تیار رہیں۔ جب آپ کے بچے کسی دوست کے گھر پر گھنٹوں ٹی وی دیکھ لیتے ہیں تو وہ سوچتے ہوں گے کہ آپ کے قواعد مختلف کیوں ہیں؟۔ اس لیے بے حد ضروری ہے کہ جب آپ اپنے بچوں پر اسکرین پر پابندی لگا رہے ہیں تو جب بچے آپ سے سوال کریں کہ ان کے ساتھ ایسا کیوں ہو رہا ہے حالانکہ ان کے دوستوں کے ہاں ایسا نہیں ہوتا تو بچوں کو پیار سے سمجھانے کی ضرورت ہے نہ کہ ان پر کسی بھی طرح کا جبر کرنے کی ضرورت ہے۔
  • اپنے بچوں کو تفریح ​​کے دوسرے طریقے تلاش کرنے میں مدد کریں۔ اگر کسی بچے کے پاس اسکرین کو گھورنے کے سوا کچھ نہیں ہے تو ہمیں حیران نہیں ہونا چاہیے جب وہ ایسا کرتا ہے۔ جب آپ کے بچے یہ دعویٰ کریں کہ آپ کے پاس کرنے کے لیے کچھ نہیں ہے تو دیگر سرگرمیاں جیسے آرٹ کی فراہمی، کتابیں، فریسبی، اور بائک  اپنے ارد گرد  تیار رکھیں اور بچوں کو ان میں مشغول کرنے کی کوشیش کریں۔
  •  ایسے پروگرام اور ایپس کا استعمال کریں جنہیں آپ مقررہ وقت کے بعد کمپیوٹرز، ٹیبلیٹس اور اسمارٹ فونز کو بند کرنے کے لیے سیٹ کر سکتے ہیں۔
  •  آپ کے بچے کے بڑے ہوتے ہی اسکرین کے وقت کی حد کو ایڈجسٹ کریں۔ آپ ان کے ساتھ اس بارے میں بات کر سکتے ہیں کہ پورے خاندان کو کتنا اسکرین ٹائم ملنا چاہیے۔ ایک بار جب آپ ایک منصوبہ طے کرلیں تو اس پر قائم رہیں تا کہ بچوں کو بھی پتہ چلے کہ ہمارے ماں باپ بھی ان اصولوں پر عمل کرتے ہیں جو اصول وہ ہمارے لیے بناتے ہیں۔
  • حقیقت پسند بنیں اور اگر آپ کے بچے بہت زیادہ فرصت کا وقت اسکرینوں پر گزار رہے ہیں بشمول ٹی وی دیکھنا، تو چھوٹے زیادہ قابل حصول اہداف طے کرکے شروعات کریں۔ تجویز کردہ ایک سے دو گھنٹے یا اس سے کم فی دن دائیں کودینے کے بجائے ان کے موجودہ اسکرین ٹائم کو نصف میں کاٹ کر شروع کریں۔
  • اپنے بچوں کو کام میں مشغول رہنا سیکھائیں۔ اسکول یا کام کے بعد ہر روز بچوں کے ساتھ آمنے سامنے بات کرنے میں وقت گزاریں اور انہیں اپنی پوری توجہ دیں۔
  •  ہاتھ سے پکڑے گئے آلات کو بچوں سے  دور رکھیں۔ اسکرین سے پاک اوقات کے دوران، آلات کو دور رکھیں یا کسی عام جگہ پر چارجنگ اسٹیشن پر رکھیں تاکہ وہ آپ کے بچوں کی توجہ اپنی طرف متوجہ نہ کر سکیں۔ 
  • باہر جاتے وقت فون نیچے رکھنا اور چہل قدمی کرنا یا باہر کھیلنا آپ کے اینڈورفنز کو بڑھاتا ہے اور آپ کے دماغ میں خوشی کا احساس فراہم کرتا ہے آپ کے موڈ کو بڑھاتا ہے اور آپ کی جسمانی صحت کو بہتر بناتا ہے۔
  • بچوں کی ڈیواسز میں ٹریکنگ ایپ ڈاؤن لوڈ کریں بہت ساری اسکرین ٹائم ٹریکنگ اور پیرنٹل کنٹرول ایپس ہیں جو اس بات کی نگرانی کریں گی کہ گھر میں کون سی ایپس استعمال کی جا رہی ہیں کتنے عرصے تک اور کس کے ذریعے استعمال کی جا رہی ہیں۔
  • معلومات اکٹھا کرنے کے بعد، فیصلہ کریں کہ کیا آپ اس ایپ کو استعمال کرنا چاہتے ہیں کہ اس میں کس چیز تک رسائی حاصل کی جا سکتی ہے اور کتنی دیر تک کی جا سکتی ہے۔ 
  • لاگ اسکرین ٹائم بمقابلہ فعال وقت اس بات کا احساس حاصل کرنے کے لیے کہ آپ کے گھرانے میں کن تبدیلیوں کی ضرورت ہو سکتی ہے اپنے خاندان کے اسکرین ٹائم اور فعال وقت کو ٹریک کریں۔ سب سے پہلے لاگ ان کریں کہ آپ کا خاندان اسکرین کے سامنے کتنا وقت گزارتا ہے بشمول ٹی وی اور فلمیں دیکھنا ویڈیو گیمز کھیلنا اور کمپیوٹر استعمال کرنا, پھر دیکھیں کہ خاندان کتنا وقت جسمانی سرگرمیوں میں صرف کرتا ہے جیسے کہ چلنا فعال کام کرنا یا ایک ساتھ کھیل کھیلنا۔ اگر آپ دیکھتے ہیں کہ آپ کا خاندان فعال ہونے کے بجائے اسکرین کے سامنے زیادہ گھنٹے لگاتا ہے، تو ایک ساتھ بیٹھیں اور اپنی جسمانی سرگرمی کو بڑھانے کے لیے اہداف طے کریں۔
Disclaimer: The contents of this article are intended to raise awareness about common health issues and should not be viewed as sound medical advice for your specific condition. You should always consult with a licensed medical practitioner prior to following any suggestions outlined in this article or adopting any treatment protocol based on the contents of this article.

Dr. Rizwan Gohar - Author Dr. Rizwan Gohar is a well regarded pediatrician in Lahore. You can book an appointment with him using oladoc.
Book Appointment with the best "Child Specialists"